یہ ادا یہ ناز یہ حجاب آپ کا۔۔

یہ ادا یہ ناز یہ حجاب آپ کا۔۔

نیا گلوبل ولیج ہے۔جس طرح آج دنیا رابطے میں رہنا نا ممکن نہیں رہا اسی طرح آج کسی ایک ملک کا فیشن اس ملک تک محدود نہیں رہا بلکہ جو فیشن جسے پسند آتا ہے وہ اپنا لیتا ہے۔وہیں ہماری خواتین اور بچیاں عربی‘ترکش اور ایرانی حجاب سے بہت خوبصورت اور خوش نظر آتی ہیں۔ عربی حجاب خواتین کو بہت خوبصورت لک دیتا ہے اس کے بہترین تاثر کے لئے اگر سلک حجاب کو عربی انداز میں اوڑھ لیا جائے تو آپ کی شخصیت بہت باوقار نظر آئے گی۔

اسی طرح ترکش حجاب کو اگر نکلیس اور ہلکے پھلکے حجاب کے ساتھ اپنایا جائے تو بہترین لک دے گا۔اسی طرح پلیٹڈ حجاب بھی بعض خواتین شوق سے اوڑھتی ہیں جس میں حجاب کے نیچے پلیٹڈ کیپ پہنی جاتی ہے پھر اوپر سے حجاب کیا جاتا ہے۔

حجاب پہننے کے عام طور پر دو طریقے استعمال ہوتے ہیں ایک تو یہ کہ سر اور گردن پر اچھی طرح سیٹ کر باندھ لیں اور دوسرا طریقہ اسے تھوڑی سے نیچے کندھے پر پھیلا کر ڈھیلے ڈھالے اور آرام دہ انداز میں استعمال کیا جائے۔

حجاب پوری دنیا میں مقبول ہے۔اس کا تعلق ایران سے ہے۔یہ اسکارف گردن کے گرد اچھی طرح سیٹ کر نفیس انداز میں اوڑھا جاتاہے۔چونکہ اکیسویں صدی میں خواتین مردوں کے شانہ بشانہ کام کر رہی ہیں۔کوئی بھی شعبہ ایسا نہیں جہاں خواتین اب مردوں سے پیچھے ہیں۔اور تو اور اب حجاب اوڑھے خواتین بطور پائلٹ بھی فرائض سر انجام دے رہی ہیں۔اب پردہ عورت کی ترقی کی راہ میں رکاوٹ نہیں رہا۔

اب حجاب فیشن کے تقاضوں کو بھی بھرپور انداز سے پورا کرتا ہے۔حجاب کا ایک اور پہلو کسی طور بھی نظر انداز نہیں کیا جا سکتا یعنی حجاب پوری دنیا میں مسلمان خواتین کی منفرد پہچان ہے۔
گزشتہ چند عرصے سے حجاب اور عبائیہ کا رجحان عام ہے بڑی تعداد میں لڑکیاں اس کو ضرورت سمجھ رہی ہیں اور فیشن بھی،پہلے جہاں برقعے میں خواتین اپنے آپ کو محفوظ سمجھتی تھی وہاں آج کل برقعے سے زیادہ حجاب کو ترجیح دی جا رہی ہے اور اس کا فیشن تیزی سے فروغ پا رہا ہے پردہ کرنے والی خواتین کے علاوہ اس کو فیشن کے طورپر بھی استعمال کرتی ہیں اور خوبصورتی کے لئے بھی پہنتی ہیں حجاب اور عبائیہ کو اب صرف شادی شدہ خواتین یا گھریلو خواتین ہی نہیں بلکہ نوجوان لڑکیاں بھی شوق کے طور پر پہن رہی ہیں ہم حجاب عبائیہ اور پردے کو عورت کا فطری حسن کہہ سکتے ہیں خواتین کی اس بدلتی ہوئی دلچسپی کو مد نظر رکھتے ہوئے مارکیٹ میں ہر روز نت نئے انداز کے عبائیہ اور حجاب متعارف کروائے جا رہے ہیں جو جدید ڈیزائننگ کے ہوتے ہیں عورتوں اور لڑکیوں کی توجہ کا محور بنے ہوتے ہیں۔


بہت سے سکول کالجز اور یونیورسٹیوں کی لڑکیاں ماڈرن ہونے کے باوجود اپنے مذہب سے لگاؤ کے باعث حجاب اسکارف کو ترجیح دیتی ہیں حجاب کا ایک بڑا فائدہ یہ ہے کہ دوپٹے کی ضرورت کو پورا کر دیتا ہے۔حجاب اور عبائیہ کا ایک دوسرے سے گہرا تعلق ہے پہلے عبائیہ کا فیشن خواتین اور لڑکیوں میں مقبول ہوا پھر حجاب کی اہمیت بڑھی پھر حجاب کو پردے کے ساتھ ساتھ فیشن کا بھی حصہ کہہ سکتے ہیں ہم اگر اس کی ہسٹری پر نظر ڈالیں تو اسلام نے عورت کو سب سے پہلے عزت دی اور معاشرے میں اسے فخر و عزت کا باعث بنایا۔

زمانہ قدیم سے ہی حجاب اوڑھنا مشرقی خواتین کا طرہ امتیاز رہا ہے اور مغلیہ دور میں جہاں خواتین اپنے سر فینسی گوٹے کناری والی چیزیوں سے ڈھک لیا کرتی تھیں تقریباً نصف صدی قبل اس فن میں تبدیلی آئی اور اس کا رجحان بڑھ گیا اور اس میں ہونے والی تبدیلیاں خواتین کو اپنی طرف متوجہ کر رہی ہیں۔خواتین نے اس خوبصورت تحفے کو صدیوں سے اپنی زینت بنا رکھا ہے ہر خطے اور علاقے کے لحاظ سے حجاب کو اوڑھنے کا طریقہ الگ الگ ہے مگر اس کا مقصد صرف ایک ہے وہ ہے پردہ۔

پردہ اور حجاب ایک ایسا خوبصورت عمل ہے جو بے حیائی کی جڑیں کاٹ دیتا ہے۔ یہاں ایک لڑکی کا ذکر کروں گی جس نے نوبل پرائز جیتا جو یمن کے شہر لوکل کرمان میں رہتی ہے صحافی نے اس لڑکی سے سوال پوچھا جس کے جواب نے صحافی کو شرمندہ کر دیا صحافی آپ حجاب کیوں پہنتی ہیں جبکہ آپ با شعور ہیں اور اعلیٰ تعلیم بھی حاصل کی ہے؟اس لڑکی نے نہایت خوبصورتی سے جواب دیا آغاز کائنات میں انسان ننگا تھا اور جب شعور ملا تو اس نے لباس پہننا شروع کر دیا۔

میں آج جس مقام پر ہوں وہ انسانی سوچ اور انسانی تہذیب کا اعلیٰ ترین مقام ہے قدامت پسند نہیں پرانے زمانے کی طرح انسان پھر سے کپڑے اتارنا شروع کر دے یہ قدامت پسندی ہے۔
لیجنڈ ڈرامہ نگار ولیم شیکسپیئر نے کہا تھا کہ لباس انسان کی شخصیت کا عکاس ہوتا ہے۔”دنیا میں شاید ہی کوئی ایسا شخص ہو گا جسے اچھا دکھنے کا شوق نہ ہو،خاص طور پر خواتین،ان کا تعلق خواہ مشرق سے ہو یا مغرب سے ،فیشن کے معاملے میں مشکل سے ہی سمجھوتہ کرتی ہیں۔لباس کا انتخاب اس شوق کی تکمیل میں بنیادی کردار ادا کرتا ہے۔اچھا لباس کسی شخصیت کے باذوق ہونے کی دلیل سمجھا جاتا ہے۔اچھا دکھائی دینے کی فطری جبلت نے دنیا میں فیشن انڈسٹری کو فروغ دیا ہے۔اکثر خواتین حجاب کو خوبصورتی کے لئے پہنتی ہیں۔

What's Your Reaction?

like
0
dislike
0
love
0
funny
0
angry
0
sad
0
wow
0